111

بھارتی خفیہ ایجنسی کے افسران کو معلوم تھا کہ سری لنکا میں حملے ہونے والے ہیں

سری لنکا میں ہونے والے حالیہ میں جہاں بڑا اجانی نقصان ہوا وہیں حملوں میں مختلف تنظیموں کا نام بھی آ رہا ہے لیکن یہاں دلچسپ امر یہ ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسی نے سری لنکا کو چند گھنٹے قل حملے کے خطرے سے آگاہ کر دیا تھا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ سری لنکن خفیہ ایجنسی کے حکام کو مبینہ طور پر داعش کی جانب سے کیے گئے ہولناک حملے کی اطلاع چند گھنٹے پہلے ہی مل چکی تھی جس میں اب تک تین سو سے زائد افراد ہلاک ہو چکے تھے۔

سری لنکا کی وزارت دفاع اور بھارتی حکومت کے ذرائع نے بتایا ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسیوں کے افسران نے اپنے سری لنکن ہم منصبوں کو پہلے ہی حملے سے 2 گھنٹے قبل گرجا گھروں کو خطرے کی خصوصی وارننگ سے آگاہ کیا تھا۔

دوسری جانب سری لنکا کے محکمہ دفاع کے ایک اور ذریعے کا کہنا تھا کہ مذکورہ وارننگ پہلے حملے کے کئی گھنٹوں بعد بھیجی گئی۔اس کے علاوہ ایک اور عہدیدار نے بتایا کہ بھارت کی جانب سے ہفتے کی رات کو بھی ایک وارننگ جاری کی گئی تھی۔

جب کہ بھارتی حکومت کے عہدیدار نے بتایا کہ حملوں سے قبل 4 اپریل اور 20 اپریل کو بھی سری لنکا کے خفیہ ایجنٹس کو اسی طرح کے خطرے سے آگاہ کیا تھا۔تاہم اس معاملے پر سری لنکن صدارت اور بھارتی وزارت خارجہ دونوں نے کوئی بھی موقف دینے سے انکار کیا ہے۔خیال رہے اس سے قبل قومی اخبار میں شائع ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ با وثوق ذرائع نے بتایا کہ سری لنکا دھماکوں میں دہشت گرد تنظیم تامل ٹائیگرز کے ملوث ہونے کے ثبوت ملے ہیں ۔ بھارت سری لنکا کے چین کی طرف جھکاؤ سے نا خوش تھا اور اس حوالے سے بھارتی خفیہ ایجنسی را سری لنکا میں دہشت گردی کی منصوبہ بندی کر رہی تھی۔ذرائع نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ اس دہشت گردی کے پیچھے ماسٹر مائنڈ اجیت دوول ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں