80

‘تھیوری آف ہیپی نیس’ ؛ قیمت ایک ملین ڈالرز

عظیم سائنسدان البرٹ آئن سٹائن نے کامیابی کا راز بتا دیا،

95 سال قبل جاپانی ڈاکیے کیلئے ہاتھ سے لکھی ہوئی خوشگوار زندگی سے متعلق تحریر مقبوضہ بیت المقدس میں نیلام ہوئی۔

معروف سائنسدان کی یہ تحریر 1922ء میں آئن سٹائن نے جرمن زبان میں لکھی جب وہ جاپان کے دورے پر ٹوکیو کے ہوٹل میں رہائش پذیر تھے، جہاں جاپانی کوریئر ان کیلئے ایک خط لایا اور عظیم سائنسدان کی ٹپ قبول نہ کی۔

آئن سٹائن نہیں چاہتے تھے کہ وہ خالی ہاتھ جائے، اس لیے انہوں نے ہوٹل کی سٹیشنری پر جرمن زبان میں نوٹس لکھے اور کہا کہ اگر وہ خوش قسمت ہوا تو یہ نوٹس اس کیلئے بہت قیمتی ثابت ہونگے۔

ایک نوٹ میں آئن سٹائن نے لکھا تھا کہ ”سادہ زندگی زیادہ خوشی لاتی ہے، کامیابی کیلئے سکون ترک کرنا پڑتا ہے“۔ دوسرے نوٹ میں لکھا کہ ”جہاں چاہ، وہاں راہ“۔

ہیبریو یونیورسٹی کے رونی گروسز کے مطابق آئن سٹائن کے یہ دونوں نوٹس محققین کے علم میں نہیں تھے۔ دونوں نوٹس عظیم سائنسدان کی ذاتی سوچ کی عکاسی کرتے ہیں۔ آئن سٹائن کے یہ دونوں نوٹس ان کی دیگر اشیاء سمیت نیلام ہوئے۔

آئن سٹائن نے اپنے نوٹس میں کامیاب ہونے کے طریقے بتائے کی بجائے خوشحال زندگی گزارنے کے گرُ بتائے، ان کا کہنا تھا کہ تھکا دینے والی جدوجہد کی بجائے عاجزی سے زندگی گزارنی چاہیے جو زیادہ خوشی دیتی، خوشی اور کامیابی دو الگ چیزیں ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں