155

بھارت: پہلی خواجہ سرا جج تعینات

بھارت میں مغربی بنگال کے ضلع اسلام پورکی عدالت میں پہلی خواجہ سرا کوجج مقررکردیا گیا۔

بھارتی سپریم کورٹ نے2014خواجہ سراؤں کو تیسری جنس کے طورپرشناخت دیتے ہوئے حکومت کو احکامات جاری کئے تھے کہ خواجہ سراؤں کو ملازمتوں اورتعلیمی اداروں میں مخصوص کوٹہ جاری کیا جائے۔

عدالتی احکامات کے تحت خواجہ سرا جوئیتامالامونڈال کو بنگال کی ضلع اسلام پور کی لوک عدالت کی پہلی خواجہ سراجج مقررکردیا گیا،جوئیتا مالا بھارت کی پہلی خواجہ سراہیں جن کو جج تعینات کیاگیا ہے۔

غیرملکی خبررساں اداریکے مطابق خواجہ سراجج جوئیتامونڈال کاکہناتھا کہ خواجہ سراؤں کومعاشرے میں امتیازی سلوک کاسامنا کرنا پڑتاتھا یہ ایک تکلیف دہ موقع تھا، لوگوں کے تضحیک آمیزرویے کی باعث تعلیم شروع کی اور قانون کی ڈگری حاصل کی۔

جوئیتامالامونڈال کاکہنا تھا کہ معاشرے سے ملنے والی عزت پربہت خوش ہوں، اپنی ذمہ داریوں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اب تک مالک مکان اورکرایہ داروں سمیت بینک لون کے چارمقدمات کو کامیابی سے مکمل کیا ہے اورامید کرتی ہوں کہ اپنی ذمہ داریوں کو پوری ایمانداری سے جاری رکھوں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں