76

حماس اور فتح کے درمیان معاہدہ طے پاگیا

فلسطین کی دو اہم مخالف سیاسی جماعتوں، حماس اور فتح کے درمیان سیاسی مفاہمت کا معاہدہ طے پاگیا۔

الجزیرہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق حماس کے رہنما اور فلسطین کے سابق وزیراعظم اسماعیل ہنیہ نے ایک جاری بیان میں کہا کہ ان کی تنظیم اور مخالف تنظیم کے درمیان سیاسی مفاہمت کے تحت معاہدہ طے پاگیا۔تاہم انہوں نے اس معاہدے کی مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

الجزیرہ نے اپنی رپورٹ میں یہ امکان ظاہر کیا ہے کہ معاہدے کی تفصیلات آج (12 اکتوبر کو) کسی بھی وقت مصر کے دارالحکومت قائرہ میں ایک نیوز کانفرنس کے دوران بتادی جائیں گی، جہاں رواں ہفتے منگل کے روز سے دونوں جماعتوں کے درمیان مذاکرات کا آغاز ہوا تھا۔اسماعیل ہنیہ نے اپنے بیان میں کہا کہ ’فتح اور حماس کے درمیان مصر کی حمایت سے ہونے والے مذاکرات کے دوران ایک معاہدہ طے پاگیا ہے‘۔

خیال رہے کہ فتح نے 2007 میں حماس سے ہونے والی لڑائی کے بعد غزہ پر اپنا کنٹرول کھو دیا تھا، لیکن گذشتہ ماہ حماس نے فتح کی مدد سے قائم، صدر محمود عباس کو غزہ کی حکومت سنبھالنے کی پیش کش کی تھی اور یہ معاہدہ بھی مصر کی حمایت کے باعث عمل میں آیا تھا۔

قائرہ میں ہونے والا حالیہ اجلاس دونوں اہم سیاسی پارٹیز کے 2011 کے قائرہ معاہدے پر عمل درآمد کے لیے منعقد کیا گیا تھا جس کا مقصد دونوں تنظیموں میں 10 سالہ سیاسی کشیدگی کو ختم کرنا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں