40

فیصل مسجد کے امام پر پابندی لگ گئی

اسلام آباد: پاکستان کی ایک سیکیورٹی ایجنسی کی درخواست پر وفاقی دارالحکومت میں واقع فیصل مسجد کے امام کو جمعہ کے خطبے کے دوران سیاسی معاملات پر بات کرنے سے روک دیا گیا۔

انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد (آئی آئی یو آئی) کے ریکٹر ڈاکٹر معصوم یاسین زئی نے ڈان کو بتایا کہ انہوں نے فیصل مسجد کے امام کو کسی بھی سیاسی معاملے میں الجھنے سے باز رہنے کا کہا۔

انہوں نے بتایا کہ ایک خفیہ ایجنسی کی درخواست پر امام مسجد کو اپنے خطبوں کے دوران میانہ روی اختیار کرنے کا کہا گیا جنہوں نے گذشتہ جمعہ کو اپنے خطبے میں حکمرانوں کے لیے اللہ سے ہدایت مانگی تھی۔

ادھر فیڈریشن آف آل پاکستان یونیورسٹیز اسٹاف ایسوسی ایشن نے اپنے نمائندوں کو اسلامک یونیورسٹی میں تقریب منعقد کرنے کی اجازت نہ دینے کے لیے یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف مظاہرہ کیا اور ملک بھر میں یوم سیاہ منانے کا اعلان کیا۔

ڈاکٹر معصوم یاسین زئی کا کہنا تھا کہ اسلامک یونیورسٹی کے آڈیٹوریم میں تقریب منعقد کرنے کے لیے منتظمین کو یونیورسٹی انتظامیہ سے پیشگی اجازت لینی ضروری ہے۔

انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی کی ایک کمیٹی ہے جو درخواستیں وصول کرتی ہے اور پھر تقریب کے ایجنڈے اور مقررین پر بحث اور ان کی جانچ پڑتال کے بعد حتمی اجازت دیتی ہے۔تاہم اس معاملے میں فیڈریشن آف آل پاکستان یونیورسٹیز اسٹاف ایسوسی ایشن کی انتظامیہ نے مذکورہ طریقہ کار کی پیروی نہیں کی۔

انہوں نے بتایا کہ اگر کوئی موجودہ حکومت اور ہائیر ایجوکیشن کمیشن وغیرہ کے خلاف تقریر کرتا ہے تو یونیورسٹی انتظامیہ کو یہ معاملہ سنبھالنا مشکل ہوجائے گا لہٰذا تقریبات کے منتظمین سے آڈیٹوریم حاصل کرنے کے لیے مکمل طریقہ کی پیروی کرنے کی درخواست کی جاتی ہے۔

دوسری جانب فیڈریشن کا کہنا ہے کہ وہ ملک بھر میں اسلامک یونیورسٹی کی جانب سے آڈیٹوریم فراہم نہ کرنے کے خلاف یوم سیاہ منائے گی۔فیڈریشن کے مطابق اساتذہ مختلف مسائل پر بحث کرنے کے لیے ایک تقریب منعقد کرنا چاہتے تھے جن میں اٹھارہویں آئینی ترمیم اور ملک میں اعلیٰ تعلیمی منظرنامے اور اعلیٰ تعلیمی سیکٹر میں انتظامی اور تعلیمی اصلاحات شامل ہیں۔

اٹھارہویں ترمیم کے مطابق ہائیر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) کے کچھ اہم محکموں کو صوبوں کو منتقل کیا جانا تھا تاہم کچھ تکنیکی مسائل کی وجہ سے یہ معاملہ گذشتہ ایک برس سے تاخیر کا شکار ہے۔

فیڈریشن کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق اساتذہ کو اسلامک یونیورسٹی کے آڈیٹوریم میں تعلیمی مسائل پر بات کرنے سے روکا گیا جو سراسر نا انصافی ہے۔اساتذہ نے وزیراعظم پاکستان سے اس معاملے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کر رکھا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں