37

سابق وزیر اعظم نواز شریف کا مشن جی ٹی روڈ

نااہلی کے بعد سابق وزیر اعظم نواز شریف کا اسلام آباد سے لاہور کے لئے بڑا سفر، تیاریاں مکمل، راستے سج گئے، سکیورٹی انتظامات کو بھی حتمی شکل دے دی گئی۔ روٹ کیا ہو گا؟ نواز شریف کا خطاب کہاں کہاں ہو گا؟ دنیا نیوز نے تفصیلات حاصل کر لیں۔

اسلام آباد: سابق وزیر اعظم نواز شریف کی لاہور روانگی کے انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں۔ ریلی کا روٹ فائنل کر لیا گیا ہے اور ضلعی انتظامیہ نے بھی ریلی کی اجازت دے دی ہے۔

سابق وزیر اعظم صبح 9 سے 10 بجے کے درمیان پنجاب ہاؤس سے روانہ ہوں گے۔ ریلی کا پہلا پڑاؤ ڈی چوک میں ہو گا۔ جناح ایونیو سے ہوتی ہوئی زیرو پوائنٹ پہنچے گی اور پھر راولپنڈی میں داخل ہو گی۔ جڑواں شہروں کے سنگم فیض آباد سے ریلی مری روڈ اور پھر ضلع کچہری پہنچے گی اور پھر براستہ جی ٹی روڈ لاہور کا سفر شروع ہو گا۔ اسلام آبا سے ضلع کچہری تک تمام راستوں کو خیر مقدمی بینرز اور نواز شریف کی تصاویر سے سجا دیا گیا ہے۔

نواز شریف ریلی کے دوران ڈی چوک، کچہری چوک راولپنڈی، جہلم، گجرات اور گوجرانوالا میں کارکنوں سے خطاب کریں گے۔ دوسری جانب، ضلعی انتظامیہ نے منظور شدہ روٹ کے مطابق سکیورٹی پلان تیار کر لیا ہے۔ ریلی کے موقع پر 6 ہزار سے زائد سکیورٹی اہلکار تعینات ہونگے۔ روٹ کے اردگرد کا علاقہ سیل ہو گا۔ عوام کو ٹریفک کیلئے متبادل راستے دیئے جائیں گے۔ نواز شریف بلٹ پروف گاڑی میں سفر کریں گے۔ سابق وزیر اعظم کو کہا گیا ہے کہ گاڑی کے اندر بیٹھ کر ہی خطاب کریں۔ دوسری جانب گورڈن کالج، روات، گوجر خان سمیت ضلع کے 10 کالجز میں “ہیلی پیڈ” بھی قائم کر دیئے گئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں