35

شہر اپنا پیسہ خود اکھٹا کریں گے : عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ نئے بلدیاتی نظام کے تحت ویلج کونسل کے الیکشن براہ راست ہوں گے ، اس نظام کے تحت فنڈ براہ راست گاﺅں میں جاتے ہیں جبکہ پنجاب میں بھی پنچائیت کے بھی براہ راست اتنخابات ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ماضی سے سیکھ کر نیا نظام لا رہے ہیں ، خیبر پختون خواہ میں بھی ہم نے براہ راست ویلج کونسل کے انتخابات کروائے ، ویلج کونسل کے انتخابات سے نئی لیڈر شپ بھی سامنے آئے گی تاہم یہ الیکشن صرف اور صرف سیاسی جماعتیں ہی لڑ سکیں گی ۔

سینئر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہناتھا کہ میئر اور تحصیل ناظم بھی براہ راست الیکشن سے منتخب ہو کر آئیں گے اور نئے نظام میں سے یونین کونسلز ختم کر دی گئی ہیں ، میئر پھر اپنی کابینہ خود بنائے گا ، اس نظام سے پنجاب کی 22 ہزار پنچائیتوں کو 40 ارب روپے براہ راست ملیں گے اور تمام پیسے عام پر خرچ ہوں گے۔ ان کا کہناتھا کہ ہمارے شہر کھنڈر بنتے جارہے ہیں اور سہولتیں ختم ہو تی جارہی ہیں ، لاہور بہت ہی منظم شہر تھا اور سب کچھ چلتا تھا لیکن جیسے آہستہ آہستہ شہر بڑے ہوتے گئے ، اتنا پیسہ ہی نہیںہے کہ شہر پر خرچ کیا جا سکے ، جب شہر پر خرچ کرتے ہیں تو باقی صوبہ پیچھے رہ جاتا ہے ، پنجاب میں چھوٹے چھوٹے شہر پیچھے رہ گئے ہیں ۔ان کا کہناتھا کہ بلدیاتی نظام پوری دنیا کا مطالعہ کرنے کے بعد تیار کیا گیا ہے ۔

وزیراعظم کا کہناتھا کہ شہر میں براہ راست الیکشن ہو گا اور وہ اپنی محصولات خود اکھٹی کرے گا جیسے کہ کراچی سے سالانہ 21 ملین ڈالر ، لاہور سے 32 ملین ڈالر اکھٹا ہو تاہے ۔ ابھی میں تہران سے ہو کر آیاہوں وہاں پر تہران سے 500 ملین ڈالر اکھٹا ہو تا ہے جبکہ ممبئی سے ایک ارب ڈالر اکھٹا ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب تک شہر اپنا پیسہ اکھٹا نہیں کریں گے بہتر نہیں ہو سکتے ، یہ انقلابی بلدیاتی نظام ہے کیونکہ یہ پہلی مرتبہ ہے کہ حکومت خود پاور نیچے منتقل کر رہی ہے ، 140 ارب روپے کا فنڈ براہ راست پنجاب کی بلدیات میں جائے گا ۔عمران خان کا کہناتھا کہ یہ الیکشن صرف سیاسی جماعتیں ہی لڑ سکیں گی۔ صحافی کی جانب سے عمران خان سے ملک میں جاری صدارتی نظام سے متعلق افواہوں پر سوال پوچھا گیا تو انہوں نے جواب دیا کہ ” سمجھ نہیں آ رہی ہے کہ یہ صدارتی نظام کہاں سے آ رہاہے ۔“

اپنا تبصرہ بھیجیں