54

”بیماری ایک بہانہ ہے، اصل نشانہ لندن جانا ہے“

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیماری یا عدالت سے ضمانت لینا ایک بہانہ ہے، اصل نشانہ لندن جانا ہے، جھوٹ پر مبنی عوام کو ورغلانے کا بیانیہ دم توڑ گیا اور عمران خان کا بیانیہ جیت گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پریس کانفرنس کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) نے پارلیمانی لیڈر تبدیل کر دیا ہے اور پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی (پی اے سی) کے چیئرمین کو بھی تبدیل کر دیا ہے جس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ اپوزیشن کی تمام دلیلیں ہار گئیں اور عمران خان کا بیانیہ جیت گیا کہ کوئی بھی ایسا شخص جس کا دمن داغدار ہو اسے پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی کے چیئرمین کے طور پر نامزد نہیں ہونا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو علاج کیلئے چھ ہفتوں کی ضمانت دی تھی اور آج میڈیا کے ذریعے ہمیں معلوم ہوا ہے کہ عدالت نے باہر جانے سے متعلق ان کی درخواست مسترد کر دی ہے جس پر میں صرف اتنا کہنا چاہوں گی کہ پاکستان کی عدلیہ آزاد ہے جس نے علاج کی سہولت کیلئے نواز شریف کو ریلیف دیا لیکن اس دوران وہ اپنے علاج معالجے سے زیادہ کاروباری اور خاندانی مفادات کو اکٹھا کرنے اور محفوظ کرنے میں لگے رہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف اس تمام عرصے میں اپنی صحت پر توجہ نہیں دی اور میری اطلاعات کے مطابق وہ عدالت کی جانب سے ضمانت ملنے کے بعد ایک دن بھی کسی ہسپتال میں داخل نہیں ہوئے تو اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ بیماری یا عدالت سے ضمانت لینا ایک بہانہ ہے، اصل نشانہ لندن جانا ہے۔ اس صورتحال میں میاں برادران کو خصوصی طور پر یہ سوچنا ہے کہ اگر وہ عدالت کو قائل نہیں کر سکے تو اپنے ان اقدامات سے عوام کو کیسے قائل کریں گے۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عدالتیں حقائق پر چلتی ہیں اور عوام اصل چہروں کی بنیاد پر فیصلے کرتے ہیں، جو حقائق سامنے آ رہے ہیں وہ اشارہ دے رہے ہیں کہ پاکستانی سیاست میں من گھڑت بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی پراپیگنڈے کے ذریعے عوام کو ورغلانے کا سلسلہ دم توڑ چکا ہے اور عوام اس بیانئے کے ساتھ نہیں ہیں، اب بھی وقت ہے کہ اپوزیشن عوامی مفاد میں آگے بڑھے، عوام کو ریلیف دینے کیلئے حکومت اور اپوزیشن مشترکہ سٹریٹجی کے تحت کام کریں کیونکہ ہم نے پارلیمینٹ کو چلانا ہے، ادارے اپنا کام کریں اور عوامی مفاد میں فیصلے کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں