52

تحریک انصاف کے معروف رہنما کھل کر میدان میں آگئے

پاکستان تحریک انصاف کے سینیئر رہنما حامد خان کھل کرمیدان میں آگئے ہیں اور کہا ہے کہ جہانگیر ترین کا سیاسی کردار افسوسناک رہا ہے،انہوں نے پارٹی کو تقسیم کردیا،ان جیسے لوگ پارٹی کو ہائی جیک کرنے آتے ہیں،وہ سپریم کورٹ کے حکم کی بھی خلاف ورزی کر رہے ہیں۔

ایکسپریس نیوز کے پروگرام ’ٹو دی پوائنٹ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے حامد خان کاکہناتھاکہ پنجاب میں عثمان بزدار سے بہتر شخص لانا چاہیے تھا، عمران خان کی وکالت نہ کرتا تو اب تک تاریخ کا حصہ بن چکے ہوتے، عمران خان کو کچھ ہوا تو جہانگیر ترین جیسے لوگ چھوڑ کر بھاگ جائیں گے۔ایک سوال کے جواب میں ان کاکہناتھاکہ ایسی بات نہیں ہے کہ گروپ آپس میں لڑ رہے ہیں، پارٹی میں 2011 تک کوئی دھڑے بندی نہیں تھی۔

حامد خان نے انکشاف کیا کہ عمران خان نے کہا تھا شاہ محمود قریشی جماعت میں شمولیت اختیار کرنا چاہتے ہیں لیکن وہ پارٹی کے وائس چیئرمین بننا چاہتے ہیں۔ میں نے کہا، ’’بسم اﷲ‘‘ جہانگیر ترین پہلے اپنے ساتھ اٹھارہ انیس لوگ لے کر آئے تھے، کچھ عرصے کے اندر تین چار کے علاوہ باقی سیاستدانوں کو سائڈ لائن کر دیا، صرف اس لیے کہ کہیں یہ ان کے سامنے کھڑے نہ ہو جائیں، جہانگیر ترین جیسے لوگ پارٹی کو ہائی جیک کرنے کے لیے آتے ہیں۔

ایکسپریس کے مطابق اس سوال پر کہ جہانگیر ترین پارٹی چلا رہے ہیں کہ جواب میں حامد خان نے کہا کہ افسوسناک بات ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کی خلاف ورزی ہو رہی ہے، جہانگیر ترین کے جرائم بہت بڑے تھے اور سپریم کورٹ نے سزا کم دی،عمران خان بذات خود بہت نیک نیت ، اچھا مزاج ، اچھی سوچ اور فطرت رکھنے والے انسان ہیں، ہم عمران خان اور اپنی پارٹی کی کامیابی چاہتے ہیں۔حامد خان نے کہا کہ اس وقت عمران خان سے بہتر کوئی متبادل رہنما نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں