41

ایف بی آر انٹیلی جنس انویسٹی گیشن ونگ کی کارروائیوں کا اختیار درست قرار

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایف بی آر کے انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن ونگ کی کارروائیوں کا اختیار درست قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے فیڈرل بورڈریونیوانٹیلی جنس ونگ کے اختیارات کیس کافیصلہ جاری کردیا۔ تین صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ میں کہاگیا کہ انٹیلی جنس ونگ کو انکم ٹیکس معاملات میں کارروائیوں کامکمل اختیارحاصل ہے۔تحریری فیصلہ نے بتایاکہ ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس قانون کے مطابق اختیارات استعمال کرسکتے ہیں۔

ایف بی آر انٹیلی جنس ونگ کی کارروائیوں کے اختیار کو شہری عابد حسین نے چیلنج کیا تھا، عدنان حیدر رندھاوا ایڈووکیٹ نے ایف بی آر کی طرف سے کیس کی پیروی کی۔وکیل عدنان رندھاوا نے کہا کہ انٹیلی جنس ونگ ایف بی آر کے فوجداری نوعیت کے معاملات کی نگرانی کرتاہے، ٹیکس فراڈ ،ٹیکس چھپانے ، اثاثے چھپانے سمیت دیگر معاملات ان کی زیر گرانی آتے ہیں۔وکیل کے مطابق ایف بی آر نے انٹیلی جنس ونگ کو نو فروری 2015 کو اختیارات دئیے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں