117

صدارتی نظام کیسے لایا جاسکتا ہے؟

وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے واضح کیا ہے کہ اس وقت وزارت قانون میں صدارتی نظام کے حوالے سے کوئی قانون سازی نہیں ہو رہی ، صدارتی نظام ریفرنڈم یا پارلیمان سے منظوری کے ذریعے لایا جاسکتا ہے۔

نجی ٹی وی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر قانون فروغ نسیم نے کہا کہ صدارتی نظام ریفرنڈم کے ذریعے لایا جا سکتا ہے ۔ وزیراعظم پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے ذریعے بھی منظوری لے سکتے ہیں تاہم اس کیلئے دو تہائی اکثریت سے ترمیم کرنا ہو گی۔فی الحال وزیراعظم، کابینہ یا وزارت قانون میں صدارتی نظام کے بارے میں قانون سازی پر غور نہیں ہو رہا، وزارت قانون میں فی الوقت صدارتی نظام کے لیے کوئی قانون سازی نہیں ہو رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ صدارتی نظام آئینی طریقے سے لایا جائے تو جمہوری ہوگا، اگر عوام صدارتی نظام لانا چاہیں تو سر آنکھوں پر، عوام کا فیصلہ پارلیمان سے بھی زیادہ مقدم ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں