83

فاروق ستارکی شیخ رشید احمد کو ڈرامہ دکھانے کی پیشکش

ایم کیوایم پاکستان بحالی کمیٹی کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار اہلیہ کے ہمراہ آرٹس کونسل کراچی میں ڈرامہ سٹیشن دیکھنے پہنچ گئے ،اس موقع پر اسٹیج پر موجود فنکاروں اور میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس سٹیج ڈرامے کودیکھنے کا مقصد یہ تھا کہ میں دیکھنا چاہتاتھا کہ کراچی کاسٹیج اور تھیٹر کس حال میں ہے،ڈرامہ دیکھ کر بہت خوشی ہوئی ڈرامہ انڈسٹری کو پرموٹ کرنے کے لئے حکومتی وزراڈرامہ اسٹیشن ضروردیکھیں۔

تھیٹر عوام کے لئے تفریح کا ایک بہترین زریعہ ہے حکومت وقت کو سٹیج اور تھیٹر کو ایک انڈسٹری کا درجہ دینا چاہیے ،بہت سے ڈرامے دیکھے مگرپہلی بار سٹیج اور فلم یکجا ہوتے دیکھا ہے۔، سٹیشن صرف لوگوں کے بچھڑنے اور دور جانے کی جگہ نہیں ہے بلکہ یہاں پر بچھڑے ہوئے لوگ بھی ایک دوسرے سے آکر ملتے ہیں،میری خواہش ہے کہ اس ڈرامے کو ایک بار شیخ رشید اور ریلوئے کی انتظامیہ ضرور دیکھے ،اس موقع پر معروف سٹیج فنکار روف لالہ ،شکیل شاہ،پرویز صدیقی ، سلیم شیخ ،زاکر مستانہ ، عامر ریمبو،محمد علی نقوی،عامر ہوکلا، چیف آرگنائزیر حزیفہ شاہ ،پروڈکشن انچارج عمیر شاہ،تبوخان،صباشیخ ،شا نزے ،فرح خان، فائزہ ملک،صائمہ حسنین سمیت سٹیشن ڈرامہ کی مکمل کاسٹ سٹیج پر موجود تھی۔

فاروق ستار کا کہنا تھا کہ یہ ڈرامہ مکمل اصلاحی اور گھریلو ڈرامہ ہے اور میں نے اپنی فیملی کے ساتھ اس ڈرامے کو دیکھ کر بہت انجوائے کیاہے اور میری شہریوں سے اپیل ہے کہ وہ بھی اس ڈرامے کودیکھنے ضرورآئیں انہوں نے اس ڈرامے کے روح رواں زاہد شاہ کی فنی خدمات کو سراہتے ہوئے کہاکہ ایسا بہت کم ہوتاہے کہ ایک شخص ڈاریکٹر بھی ہو ،پروڈیوسر بھی ہو ،رائیٹر بھی ہو اور سب سے بڑھ کر اس ڈرامے کا ہیروبھی ہو زاہد شاہ اس میدان میں اپنی تمام صلاحیتوں اور معیارپر پورااترے ہیں ،اور میں سمجھتا ہوں کہ یہ فن کی دنیا میں ایک بڑ اکام ہے ،جبکہ میں سٹیج ڈرامہ سٹیشن کے تمام فنکاروں کو خراج تحسین پیش کرتاہوں،انہوں نے مزید کہاکہ تھیٹر کہ بحالی لئے حکومتی سرپرستی کاہونا بہت ضروری ہے اورسپانسر حضرات کو بھی آگے بڑھ کر ایسے ڈراموں کے ساتھ تعاون کرنا چاہیے اور اس سلسلے میں خود بھی بات کروں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں