72

مسلم لیگ ق گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور سے ناراض ہوگئی ،

مسلم لیگ ق ایک مرتبہ پھر گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور سے ناراض ہوگئی جس کے بعد سپیکر پنجاب اسمبلی نے پنجاب آب پاک اتھارٹی بل بھی چوہدری پرویز الٰہی نے روک لیا، ذرائع نے بتایا کہ ساری صورتحال وزیراعظم عمرا ن خان کے بھی علم میں آ چکی ہے اور امکان ہے کہ گور نرپنجاب چوہدری محمدسرور کے امریکہ کے دورے سے واپسی پر مذکورہ بل کے بارے کوئی حتمی فیصلہ سامنے آئیگا ۔

ذرائع کے مطابق سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی پنجاب آب پاک اتھارٹی کا پیٹرن انچیف گور نر پنجاب کو بنانے پر ناخوش ہیں اور انہوں نے ‘پنجاب آب پاک اتھارٹی بل ‘اسمبلی سیکرٹریٹ میں روک لیا ، پنجاب اسمبلی نے 29روز پہلے پنجاب آب پاک اتھارٹی بل منظور کیا جس کے مطابق گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور کوپنجاب آب پاک اتھارٹی کا پیٹرن انچیف ہوں گے جسکی وزیر اعظم عمران خان اور پنجاب کابینہ پہلے ہی منظوری دے چکی ہے ۔ذرائع نے مزید بتایا کہ آئین کے آرٹیکل 16 1کے مطابق پنجاب اسمبلی سے منظوری کے بعد یہ بل حتمی منظور ی کیلئے 10 دن کے اندر گور نر ہائوس بجھوایا جانا تھا جسے گورنر نے منظور کرنا یا پھر کسی تحفظ کی بنیاد پر واپس بھجوانا تھا لیکن ایک تقریباً ایک ماہ گزرنے کے باوجود یہ بل گورنر ہائوس موصول نہیں ہوسکا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گور نر ہائوس کے5سے زائد بار رابطے کے باوجود سپیکر نے بل حتمی منظوری کیلئے گور نر ہائوس کو نہیں بجھوایاجسکے بعد گور نر ہائوس بل منگوانے کیلئے وزارت قانون سمیت دیگر قانونی آپشنز استعمال کر نے پر غور کر رہا ہے، وزیر اعظم عمران خان اور پنجاب کابینہ کی منظوری کے بعد ہی یہ بل پنجاب اسمبلی سے منظور ہوا لیکن اب تین ہفتے سے زائد گزرنے کے باوجودیہ بل گور نر ہائوس قانون کی شکل اختیار نہیں کر سکا جبکہ دوسری طرف ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ (ق) لیگ وعدے کے باوجود چوہدری مونس الٰہی کو وفاقی وزیر نہ بنانے پر بھی تحر یک انصاف سے ناراض ہے ۔

یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ گورنر چوہدری محمد سرور ان دنوں امریکہ کے دورے پر ہیں اور بل پر دستخط ہونے کے بعد وہ اتھارٹی کے پیٹرن انچیف بن جائیں گے ۔ آب پاک ایک ایسا منصوبہ ہے جس کا مقصد صوبے کے عوام کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی یقینی بنانا ہے ۔ ادھر پنجاب اسمبلی کے سیکریٹری محمد خان بھٹی نے دی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ یہ التوا جان بوجھ کر نہیں کیا گیا ، گورنرہائوس کوئی بھی بل بھجوانے کے لیے کچھ قانونی پیچیدگیاں پوری کرنا ہوتی ہیں ،اسمبلی کی لاء برانچ اس بل کو دیکھ رہی تھی اور جلد ہی بل گورنر ہائوس بھجوا دیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں