56

بیساکھی میلہ: بھارت سے 22 سو کے قریب سکھ یاتریوں کی آمد متوقع

بیساکھی میلے میں شرکت کے لیے ملک بھر سے یاتریوں کی آمد کا سلسلہ شروع،بھارت سے 22 سو کے قریب سکھ یاتریوں کی آمد متوقع،میلے کی سیکیورٹی کے لیئے انتہائی سخت انتظامات۔

تفصیلات کے مطابق گوردوارہ سری پنجہ صاحب حسن ابدال میں بیساکھی میلے کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں جو 12 اپریل سے پندرہ اپریل تک جاری رہے گا ۔بیساکھی میلے میں شرکت کے لیے ملک بھر سے سکھ یاتریوں کی آمد کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے،بھارت سے 22 سو کے قریب یاتری کل رات حسن ابدال پہنچیں گے جبکہ دیگر ممالک سے بھی بڑی تعداد میں یاتری اس میلے میں شرکت کریں گے، جنہیں خصوصی ٹرینوں کے ذریعے واہگہ بارڈر سے حسن ابدال لایا جائے گا، جہاں پر محکمہ اوقاف اور دیگر محکموں کے اعلی افسران ان کا استقبال کریں گے۔

یاتریوں کو ریلوے سٹیشن سے خصوصی بسوں کے ذریعے سخت سیکیورٹی حصار میں گردوارہ پنجہ صاحب پہنچایا جائے گا،جہاں تین روزہ قیام کے دوران وہ اپنی مذہبی رسومات ادا کریں گے۔ بیساکھی میلے میں اندرون ملک سے تقریبا پانچ ہزار جبکہ دنیا کے دیگر ممالک سے بھی پندرہ سو کے قریب یاتریوں کی آمد متوقع ہے۔اس موقع پر سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کیے گئے ہیں جن کی نگرانی ڈی پی او اٹک ندیم شہزاد خود کر رہے ہیں جبکہ دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے بھی سیکورٹی کے حوالے سے اپنی ڈیوٹی سر انجام دے رہے ہیں۔

ذرائع کے مطابق گوردوارہ پنجہ صاحب کے گردو نواح مختلف مقامات پر8 سے 10 واک تھروگیٹس لگائے جائیں گے۔اٹک پولیس کے علاوہ راولپنڈی،روات اور چکوال سے بھی ایک ہزار سے لیکر بارہ سو کے قریب پولیس کی اضافی نفری منگوائی جا رہی ہے۔

سیکیورٹی کو مزید بہتر بنانے کے لیئے گوردوارہ پنجہ صاحب کے اطراف میں قریبا 50 سے زائد سیکیورٹی کیمرے بھی لگائے گئے ہیں جبکہ ایمرجنسی کی صورت میں کوئیک رسپانس فورس کے دستے بھی موجود ہوں گے، گردوارہ پنجہ صاحب کے راستے کو رکاوٹیں کھڑی کر کے ہر قسم کی آمد ورفت کے لئے بند کردیا گیا ہے،اس کے علاوہ صحافیوں کو بھی میلے کی کوریج کے لیئے خصوصی سیکیورٹی پاس جاری کیے گئے ہیں،جس کے بغیر کسی صحافی کو بھی گوردوارے کے اندر جانے کی اجازت نہیں ہوگی جبکہ میلے کے دوران آس پاس کے رہائشی لوگوں کو کسی بھی پریشانی سے بچنے کے لیئے قومی شناختی کارڈز اپنے ہمراہ رکھنے کی تاکید کی گئی ہے۔

تقریبات کے دوران بھارت سے آنے والے یاتریوں کو گردوارہ پنجہ صاحب کے اندر ٹھہرایا جائے گا جنہیں شہر میں دیگر علاقوں میں جانے کی اجازت نہیں ہوگی جبکہ اندرون ملک سے آنے والے یاتریوں کو قریبی سکولوں میں ٹھہرایا جائے گا۔بیساکھی میلے کے دوران رسم بھوگ 14 اپریل کو ادا کی جائے گی جس میں وفاقی وزیر مذہبی امور سمیت دیگر اہم حکومتی شخصیات کی آمد متوقع ہے۔وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد اس سے قبل ہی یاتریوں کو الوداع کہنے کے لئے حسن ابدال آنے کا اعلان کر چکے ہیں ۔جو 15 اپریل کو ریلوے اسٹیشن حسن ابدال پر واپس روانہ ہوتے وقت انہیں الوداع کہیں گے۔

ریسکیو 1122، فائر بریگیڈ سمیت تمام محکموں کے اہلکار گوردوارہ پنجہ صاحب کے قریب موجود رہیں گے جبکہ ٹی ایم اے حسن ابدال کی جانب سے یاتریوں کو ہر ممکن سہولیات کی فراہمی اور صفائی کے انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں