77

جعلی اکاﺅنٹس سے ادائیگیوں کا معاملہ،

قومی احتساب بیورو (نیب) نے جعلی بینک اکاﺅنٹس میں تحریری جواب اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمع کروا دیا ہے اور عدالت سے آصف علی زرداری کی ضمانت مسترد کرنے کی استدعا کی ہے۔

نیب کی جانب سے جمع کرائے گئے جواب میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات پر جعلی اکاﺅنٹس سے ادائیگیوں کی تحقیقات شروع کی گئیں۔ متحدہ عرب امارات اور لیبیا سے صدر پاکستان کو تین بلٹ پروف گاڑیاں تحفے میں پیش کی گئیں اور قانون کے مطابق دو لگژی گاڑیوں سمیت تینوں بلٹ پروف گاڑیاں سرکاری ملکیت تھیں لیکن آصف زرداری نے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی ملی بھگت سے گاڑیاں حاصل کیں۔

جواب میں کہا گیا ہے کہ توشہ خانہ سے گاڑیوں کے حصول کیلئے غیر قانونی رعایت حاصل کی گئی جبکہ کلکٹر آف کسٹم کے نام تین کروڑ روپے سے زائد مالیت کے تین پے آرڈز جعلی بینک اکاﺅنٹس سے تیار ہوئے ۔ سابق صدر آصف علی زرداری سیکشن نائن اے فور کے تحت کرپشن کے مرتکب پائے گئے ہیں، ان کے ہاتھ صاف نہیں اس لئے عدالت ضمانت مسترد کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں