54

”ن لیگ اب کنفیوژن کا شکار ہے کیونکہ۔۔۔“ سہیل وڑائچ

سینئر صحافی و تجزیہ کار سہیل وڑائچ نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) اس وقت کنفیوژن کا شکار ہے کہ وہ مدافیانہ سیاست کرے یا جارحانہ سیاست کرے کیونکہ مدافیانہ سیاست کرنے پر انہیں ریلیف مل رہا ہے اور جارحانہ سیاست کرنے پر مزید تنگ کیا جا رہا ہے۔

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سہیل وڑائچ نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے خلاف جو مقدمات بنے تھے ان میں حنیف عباسی اور انجینئر قمر اسلام کے علاوہ اور بھی قیادت شامل تھے۔ اس وقت یہ بیانیہ اپنایا گیا کہ انہیں جان بوجھ کر الیکشن میں پیچھے رکھنے کیلئے سزائیں سنائی گئی ہیں اور حنیف عباسی بھی اسی معاملے میں آئے تھے کیونکہ عدالت نے غیر معمولی طور پر رات گئے تک انتظار کروا کر فیصلہ سنایا تھا، لہٰذا میں اسے بیانیہ نہیں سمجھوں گا۔

دوسری بات یہ ہے کہ مسلم لیگ (ن) کنفیوژن کا شکار ہے کہ وہ مدافیانہ سیاست کریں یا جارحانہ سیاست کرے کیونکہ مدافیانہ سیاست پر ریلیف ملتا ہے اور جارحانہ سیاست کرنے پر انہیں مزید تنگ کیا جاتا ہے۔ اس لئے جماعت دوبدو کا شکار ہے اور مدافیانہ سیاست کی طرف مائل ہے جس سے انہیں فائدہ ہو رہا ہے۔

سہیل وڑائچ نے کہا کہ اس وقت الیکشن ہو رہے ہیں اور نہ ہی حکومت کی تبدیلی کا معاملہ ہے اس لئے مسلم لیگ (ن) کو مدافیانہ سیاست کی پالیسی سوٹ کرتی ہے تاکہ وہ اپنے مقدمات اور معاملات کو دیکھ سکیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں