59

مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی میں بڑھتی ہوئی قربتوں کا منہ بولتا ثبوت

ملک کے موجودہ سیاسی منظر نامے میں اپوزیشن جماعتیں بالخصوص مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی میں حال ہی میں بڑھتی ہوئی قربتوں کا تذکرہ کئی مرتبہ سنائی دیا۔ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت کے آپس میں رابطوں سے متعلق بھی اطلاعات موصول ہوئیں۔ تاہم اب ان بڑھتی ہوئی قربتوں کا منہ بولتا ثبوت یہ ہے کہ اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف نے اپنا چیمبر پاکستان پیپلز پارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری کو دے دیا ہے۔

اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے پارلیمنٹ میں بطور چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کو اپنے زیر استعمال ایک چیبمر بلاول بھٹوکو دے دیا ہے ۔ شہبازشریف نے بلاول بھٹو زرداری کےلیے بطور چیئرمین پبلک اکائونٹس کمیٹی ملنے والا اپنا چیمبر خالی کردیا ہے۔
شہباز شریف کی طرف سے خالی کیے گئے چیمبر میں نیا فرنیچر، رنگ وروغن، پالیش، ٹائلز کی تبدیلی سمیت چیمبر کی تزئین وآرائش کا کام جاری ہے۔

اس سے قبل بلاول بھٹو ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کا چیمبر اپنے استعمال میں لاتے تھے۔ شہباز شریف کی جانب سے بلاول بھٹو زرداری کو چیمبر دئے جانے کے معاملے پر سیاسی حلقوں میں بھی چہ مگوئیاں ہو رہی ہیں۔ یاد رہے کہ اس سے قبل 11مارچ کو پاکستان پیپلزپارٹی کے چیرمین بلاول بھٹواورسابق وزیراعظم نوازشریف کی ملاقات بھی ہوئی تھی۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف نے بلاول بھٹو زرداری اور ان کے ساتھ ملاقات کے لیے جانے والے دیگر رہنماؤں کی نواز شریف کی طرف سے شکروالی چائے سے تواضع کی گئی۔
بلاول بھٹو نے نواز شریف سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کہا تھا کہ میاں صاحب سمجھوتہ کرنے پر راضی نظر نہیں آتے۔ بلاول بھٹونے نواز شریف کو این آئی بی وی ڈی سمیت سندھ کے کسی بھی اسپتال میں علاج کی پیشکش بھی کی تھی۔ واضح رہے کہ نیب کی جانب سے حمزہ شہباز کی گرفتاری کی کوششوں کے بعد پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن میں رابطوں میں مزید اضافہ ہوا ہے۔ حمزہ شہباز کی گرفتاری کے لیے شہباز شریف کی رہائش گاہ پر چھاپے کے بعد اپوزیشن جماعتوں کے اہم رہنماؤں نے ن لیگ پر دباؤ بڑھانا شروع کر دیا ہے کہ وہ حکومت مخالف تحریک کا حصہ بن جائے۔ ۔رابطہ کرنے والوں میں فضل الرحمان، پیپلزپارٹی کے اہم رہنما اور دیگر سیاسی اپوزیشن جماعتوں کے اہم رہنما شامل تھے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں