100

200بندے الٹا لٹکا دیتے تو لوٹا ہوا پیسہ واپس آجاتا، فواد چودھری

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھر ی کہا ہے کہ پاکستان میں بادشاہت ہوتی تو دوسو بندوں کو الٹا لٹکانے سے لوٹا ہوا پیسہ واپس آجاتا ۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری نے کہاکہ شہباز شریف فیملی کے بارے میں حیران کن انکشافات سامنے آ رہے ہیں، حدیبیہ کیس کا طریقہ کار ہی بار بار اپنایا گیا ،کہ لوٹ مار کا حساب ہر حالت میں ہوگا۔ پاکستان میں بادشاہت ہوتی تو دو سو بندے الٹا لٹکا دینے سے لوٹا پیسہ واپس آجاتا لیکن ہمیں قانون اور آئین کے مطابق چلنا ہوتا ہے، نیب اپنے کیسز کی پراسیکیوشن کر رہا ہے، اسے جو ریکارڈ چاہئے ہوگا ہم تعاون کریں گے۔ حمزہ شہباز کی گرفتاری کے لیے اگر نیب مدد چاہتا، تو ان کی مدد کرتے۔ یہ فیصلہ نیب نے کر ناہے کہ اس نے وفاقی حکومت سے مدد حاصل کرنی ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ کرپشن کا خاتمہ صرف وزیراعظم عمران خان کی نہیں بلکہ باقی اداروں کی بھی ذمہ داری ہے، لوٹے ہوئے دس ارب ڈالر واپس مل جائیں تو گزارا چل جائے گا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں