76

وزیراعظم آفس میں سگریٹ کون پیتا ہے؟

گذشتہ روز وزیراعظم سیکرٹریٹ میں آگ بھڑک اٹھی تھی اسی حوالے سے اب میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم آفس میں تاحال آگ بھجانے والے آلات نصب نہیں کیے گئے۔وہاں آگ بھجانے کے نامکمل انتظامات ہیں۔میڈیا رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ گذشتہ روز وزیراعظم سیکرٹریٹ میں تیسرے فلور پر لگنے والی آگ یا تو شارٹ سرکٹ کے باعث لگی یا پھر پھر ڈکٹ میں کسی نے سگریٹ پھینکنا جس کی وجہ سے نیچے پڑے کوڑے میں آگ لگ گئی۔

وزیراعظم آفس میں لگنے والی آگ کی وجوہات جانے کے لیے بھی تحقیق کی جا رہی ہے۔جب کہ وزیراعظم آفس نے 2016ء میں پی ڈبلیو ڈی کو آلات نصب کرنے کی درخواست کی تھی لیکن تین سال گزرنے کے باوجود بھی اس پر عمل نہ ہو سکا۔
واضح رہے وزیر اعظم سیکرٹریٹ میں شارٹ سرکٹ سے اس وقت آتشزدگی ہوئی جب وزیر اعظم عمران خان پانچویں منزل پر اہم میٹنگ میں مصروف تھے انہیں آگ کی نوعیت سے آگاہ کیا گیا جس کے بعد وہ فوری طور پر اپنے آفس سے روانہ ہو گئے ۔

وزیر اعظم عمران خان کے ترجمان ندیم افضل چن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ وزیر اعظم سیکرٹریٹ کی چھٹی منزل پر شارٹ سرکٹ کے باعث اس وقت ہوئی جب وزیر اعظم عمران خان پانچویں منزل پر اہم میٹنگ کی سربراہی کر رہے تھے میٹنگ کے دوران وزیر اعظم کو آگ کی نوعیت سے آگاہ کیا گیا جس پر وزیر اعظم نے فوری طور پر عملے کو آگ کی نوعیت کو جانچنے کی ہدایت بھی کر دی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دھواں زیادہ پھیلنے سے وزیر اعظم اپنے آفس سے روانہ ہوگئے لیکن عمران خان اپنی تمام میٹنگز مقررہ شیڈول کے مطابق ہیڈ کر رہے ہیں۔واضح رہے کہ وزیر اعظم سیکرٹریٹ کی چھٹی منزل پر شارٹ سرکٹ سے آتشزدگی ہوئی تھی جس پر قابو پانے کے لئے فائر بریگیڈ کی 6 گاڑیوں نے مسلسل ڈیڑھ گھنٹے تک جدوجہد کی اس دوران پولیس کی بھاری نفری بھی وزیر اعظم سیکرٹریٹ کے باہر موجود رہی جنہوں نے فوری طور پر گیس لائن کو بند کیا اور آفس ملازمین کو بحفاظت عمارت سے باہر نکالا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں