67

معذوز افراد کے حقوق سے متعلق کیس

سپریم کورٹ میں معذور افراد کے حقوق سے متعلق کیس میں ملزمان کے وکلا نے نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ کو کیس دینے پر اعتراض اٹھا دیا،بلال قدوائی کے وکیل علی رضا نے اعتراض عائد کرتے ہوئے کہا کہ جہانزیب بھروانہ پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کارپوریشن کے لیگل ایڈوائزررہے،اس زمین کا کنٹریکٹ جہانزیب بھروانہ کی ایڈوائس پر ایوارڈ ہوا،جہانزیب بھروانہ اس کیس میں کیسے پیش ہوسکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں معذورافرادکے حقوق سے متعلق کیس کی سماعت ،جسٹس شیخ عظمت سعیدکی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی ۔جسٹس اعجازالاحسن نے استفسار کیا کہ کیامعذورافرادکسی اورجگہ ایڈجسٹ نہیں ہوسکتے؟ملزمان کے وکلاکانیب پراسیکیوٹر جہانزیب کوکیس دینے پراعتراض اٹھا دیا،وکیل ملزمان کا کہنا تھا کہ جہانزیب بھروانہ پنجاب لینڈڈویلپمنٹ کارپوریشن کے لیگل ایڈوائزر رہے،اسی کمپنی کے ذریعے پنجاب حکومت نے آشیانہ سمیت مختلف ٹھیکے دیئے۔

سپیشل پراسیکیوٹرنیب نے کہاکہ اعتراض مجازاتھارٹی تک پہنچادوں گا،وکیل ملزمان نے کہاکہ ایسانہ ہو آئندہ سماعت اس بنیادپرملتوی ہوجائے،جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ دیکھتے ہیں اس معاملے میں کیاہوسکتا ہے، جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ اعتراض کواپنے حکم نامے میں شامل نہیں کررہے،مگرجوحقیقت ہے وہ حقیقت ہے،نیب کوکیس میں دلچسپی نہیں توہمیں بھی نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں