58

پانی ضائع کرنے والے شہری قانون کے شنکجے میں آ گئے

چئیرمین واٹر کمیشن کی ہدایت پر واسا لاہور نے ڈولفن فورس کی نشاندہی پر دو دنوں میں پانی ضائع کرنے والے صارفین کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے متعدد چالان کیے۔ترجمان واسا کے مطابق کاروائی کے دوران پانی ضائع کرنے والے 30 سے زائد صارفین کو چالان تھما دیے گئے۔ایم ڈی واسا سید زاہد عزیز نے عملے کو چالان کے معاملے میں کسی قسم کی غفلت نہ برتنے کی ہدایت کی۔

اس سے قبل ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ لاہور کو پانی کے بحران سے نکالنے کیلیے واسا متحرک ہو گیا۔ لاہور میں گھروں میں گاڑیاں دھونے والے افراد کیخلاف کاروائی کا آغاز کیا گیا تھا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا تھا کہ واسا نے صاف پانی سے دکانوں کے سامنے فرش دھونے پر باغبانپورہ کے ریسٹورنٹ کو 500 جرمانہ کیا تھا۔

اس سے قبل گھروں کے سامنے ریمپ پر گاڑیاں دھونے والوں کو جرمانہ کیا گیا تھا۔

ایم ڈی واسا سید زاہد عزیز کا کہنا تھا کہ پانی کا بے دریغ استعمال روکنے کے قوانین پر عملدرآمد کے لیے کاروائی کی جا رہی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ابتدائی طور پر کم جرمانے کیے جا رہے ہیں لیکن مستقبل میں بھاری جرمانہ اور سزا عائد ہو گی۔یاد رہے کہ واسا نے گھروں میں پائپ کے ذریعے گاڑیاں دھونے پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔ واسا نے یہ فیصلہ لاہور ہائیکورٹ کے حکم پر کیا تھا۔

لاہور ہائیکورٹ نے گزشتہ برس دسمبر کے ماہ میں پائپ سے گاڑیاں دھونے پر پابندی عائد کرتے ہوئے بالٹی سے گاڑی دھونے کی ہدایت کی تھی اور کہا تھا کہ گاڑی دھونا ہو تو رہائشی بالٹی میں پانی بھر کر دھوئیں ۔ں ۔ عدالت نے لاہور ڈیولپمنٹ اتھارٹی اور واسا کو سروس اسٹیشنز پر پائپ سے گاڑیاں دھونے پر پابندی لگانے کا حکم دیا تھا، جب کہ شہریوں کو بھی بالٹی میں پانی بھرکر گاڑی دھونے کی ہدایت کی گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں