88

حمزہ شہباز کی گرفتاری کی کاوشیں لیکن شہبازشریف اس وقت کہاں ہیں ؟

نیب کی ٹیم پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی گرفتاری کے لیے ماڈل ٹاؤن میں شہبازشریف کی رہائش گاہ کے باہر موجود ہے اور گرفتاری کو یقینی بنانے کے لیے سیڑھی اور رینجرز بھی طلب کرلی گئی لیکن اب سینئر صحافی اور تجزیہ نگار حبیب اکرم نے کہا ہے کہ وہ نہیں سمجھتے کہ نیب کسی بھی گرفتاری کے لیے سیڑھی کا استعمال کرے گی ، اس وقت قومی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر شہبازشریف بھی اسی گھر میں موجود ہیں ، فیملی کے دیگر لوگ اور خواتین بھی موجود ہوں گی ، سیڑھی کے استعمال کے امکانات نہ ہونے کے برابر ہیں۔

وہ دنیا ٹی وی سے خصوصی گفتگو کررہے تھے ۔ اس موقع پر حبیب اکرم کاکہناتھاکہ مسلم لیگ ن کے حلقوں سے بھی بات چیت ہوئی ہے ، مسلم لیگ ن بھی ایک خاص حد تک جائے گی ، اس سے آگے نہیں بڑھے گی ، کل کی پریس کانفرنس میں بھی کہا تھا کہ گرفتا رکرنا ہے تو کرلیں۔ عام آدمی کی گرفتاری کے لیے بھی اتنی کاوشیں اور مزاحمت سے متعلق سوال کے جواب میں حبیب اکرم کاکہناتھاکہ حمزہ شہباز شریف عام آدمی نہیں ہیں، وہ پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور رکن اسمبلی ہیں ۔

ان کا کہناتھاکہ مسلم لیگ ن ایک سیاسی پیغام دینا چاہتی تھی جس میں وہ بڑی حد تک کامیاب بھی ہوئے ہیں، گرفتاریاں بھی ہوئیں اور مقدمات کا سامنا بھی کیا۔ انہوں نے بتایا کہ گھر کے پچھلے دروازے پر بھی سیکیورٹی فورسز کی نفری بڑھ رہی ہے اور ایسا محسوس ہوتا ہے کہ نیب اپنی طاقت دکھا رہی ہے اور اب یہ معاملہ زیادہ دیر نہیں چل پائے گا، نیب کے نوٹسز پر مسلم لیگ ن کا اپنا نظریہ ہے کہ جیسے ایک نوٹس آتاہے ، اس کی تفتیش ہوتی ہے اور پھر گرفتاری وغیرہ ہوتی ہے لیکن اس نوٹس میں وہ طریقہ کار اختیار نہیں کیاگیا، ایک طرف مسلم لیگ ن کا موقف دیکھیں تو محسوس ہوتا ہے کہ عدالتی فیصلے کی نظر میں وہ درست ہے لیکن نیب کا اس پر باضابطہ موقف نہیں آیا لیکن ایک ایسے فیصلے کا سہارا لے رہا ہے جو اس کیس کیلئے نہیں آیا لیکن اس فیصلے کو نظیر کے طورپر لے رہے ہیں، نیب کا وارنٹ عدالت کا نہیں بلکہ نیب کا اپنا وارنٹ ہے ۔

دوسری طرف لیگی کارکنان کی بڑی تعداد بھی ماڈل ٹائون پہنچ چکی ہے جنہوں نے گھر کے باہر دھرنا دیدیا ہے ۔ عینی شاہدین کے مطابق پولیس اور کارکنان کا آمنا سامنا بھی ہوا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں