54

حکمران پولیس کو استعمال کرتے ہوئے عام شہریوں کو یرغمال بناتے ہیں، عمران خان

کوٹ ادو میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے چیئرمین نے کہا کہ اس سے پہلے بھی یہاں کا دورہ کیا مگر جو جذبہ آج دیکھا اس سے پہلے کبھی نظر نہیں آیا، عوام کو اپنے حقوق کا احساس ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عوام اچھی طرح جان گئے کہ وہ ماضی میں مافیاز کو ووٹ دیتے آئے ہیں جنہوں نے قومی خزانے کو نقصان پہنچا کر اپنے عالیشان محلات بنائے، حکمران پولیس کو استعمال کرتے ہوئے عام شہریوں کو یرغمال بناتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے لوگوں کا خیال تھا لوگ پاناما کو بھول جائیں گے مگر ایسا نہیں ہوا، اب عوام اپنا لوٹا ہوا پیسہ واپس لینے کے لیے جاگ چکے ہیں، خواجہ آصف خود جواب دیں کیا لوگ پاناما کو بھول گئے؟۔

تحریک انصاف کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ آف شور کمپنیوں کے معاملے پر جھوٹ بولا جارہا ہے، اگر ایسا ہے تو مریم صفدر بتائیں کہ کوئی ایک ایسا شہری ہو جو صبح جاگے تو اکاؤنٹ میں 80 کروڑ روپے آگئے ہوں۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ حکومت نے اداروں کے لیے صرف ایک ہی میرٹ سسٹم قائم کیا ہوا ہے، درباری شخص کو حکومت اچھا عہدہ دیتے ہے جبکہ پڑھے لکھے شخص کو نظر انداز کردیا جاتا ہے، حکومت نے ایک مجرم کو پارٹی کا صدر بنانے کے لیے مرضی کا قانون پاس کروایا جبکہ دنیا میں کوئی بھی مجرم کسی پارٹی کی صدارت نہیں کرسکتا۔

حکومت نے مجرم کو ملکی خزانے پر بٹھا دیا اس لیے بیرونی قرضے بڑھتے جارہے ہیں، آج ہر پاکستانی ایک لاکھ 20 ہزار روپے کا مقروض ہوچکا ہے، آج جب جواب دینے کا وقت آیا تو قوم کے مجرم طبیعت خراب ہونے کا عذر پیش کررہے ہیں اور اپنے آپ کو برطانوی شہری ظاہر کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت صرف ترقی کے دعوے کرتی ہے مگر عوام کے لیے انہوں نے کچھ نہیں کیا، شہباز شریف کو وزیراعلیٰ نہیں بلکہ بالی ووڈ کا اداکار ہونا چاہیے، تحریک انصاف کو موقع ملا تو عوام کو صحت ، تعلیم اور بنیادی ضروریات میں ریلیف ملے گا۔

عمران خان نے کہا کہ اگر ایک بار مجھے موقع ملا تو سب سے پہلے پاکستان کے اسپتال ٹھیک کر کے دکھاؤں گا، ہمیں کے پی کے میں پہلی بار حکومت ملی جس کے بعد وہاں کی پولیس، صحت اور تعلیم کا نظام دیگر صوبوں کے مقابلے میں بہت بہتر ہوا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں