89

نواز شریف کی مجھے کیوں نکالا کی رٹ بر قرار

سابق وزیر اعظم نواز شریف ایک بار پھر وطن واپسی کی بجائے جدہ سے لندن پہنچ گئے جہاں نواز شریف نے خوب گلے شکوے بھی کئے اور اپنے کارناموں کا تذکرہ بھی کیا۔ نواز شریف نے عدالتی فیصلے پر بھی نکتہ چینی کی۔

لندن پہنچ کر نواز شریف میڈیا سے گفتگو میں اپنی تعریفوں کے پل باندھتے رہے، نواز شریف نے کہا کہ مجھے نکالا تو اسٹاک مارکیٹ نیچے آ گئی۔ ہم دو قدم آگے جاتے ہیں تو چار پیچھے چلے جاتے ہیں۔

سابق وزیر اعظم نے ایک بار پھر عدالتی فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ پاناما کے بجائے مجھے اقامہ پر نکالا گیا۔ جب ملک میں ایسے حالات پیدا کردیے جائیں تو پھر کیسی ترقی ؟

نواز شریف کو اعتدال پسند ساتھیوں نے اداروں سے محاذ آرائی نہ کرنے کا مشورہ دیا تھا مگر نواز شریف واپس آنے اور اپنی سابقہ پالیسی بر قرار رکھنے پر بضد ہیں۔

ذرائع کے مطابق اپنے اعتدال پسند ساتھیوں کے مشورے کے بر عکس نواز شریف نے دو نومبر کو وطن واپسی کا فیصلہ کر لیا ہے۔

نواز شریف دو نومبر کو واپس آ کر تین نومبر کو عدالت میں پیش ہوں گے۔ وہ پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کی صدارت بھی کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں