165

تحریک لبیک یا رسول اللہ کا دھرنا پانچویں روز میں داخل

اسلام آباد: تحریک لبیک یا رسول اللہ ؐ کا دھرنا چوتھے روز بھی جاری رہا۔ چئیرمین تحریک لبیک ڈاکٹر اشرف آصف جلالی نے کہا کہ وہ مطالبات منظور کرا کر ہی واپس جائیں گے ۔

چائنا چوک میں تحریک لبیک یا رسول کے شرکا کے گرد پولیس اور ایف سی نے گھیرامزید تنگ کر دیا جب کہ کھانا پینے کی اشیا کی ترسیل معطل کر دی گئی ۔ حکومت کی جانب سے اٹھائے جانے والے تمام اقدامات کے باوجود شرکاء مطالبات کی منظوری تک ڈٹے رہنے کیلئے پر عزم ہیں۔

دھرنے کے شرکاءکو منتشر کرنے کےلئے انتظامیہ نے تحریک لبیک یا رسول اللہؐ کے مرکزی قائدین سے مذاکرات کے چاردور کیے لیکن کوئی نتیجہ نہ نکلا۔

مذاکرات میں ناکامی کے بعد اسلام آباد پولیس نے 20 سے زائد کارکنوں کو گرفتار کرلیا ۔ چئیرمین تحریک لبیک ڈاکڑ اشرف آصف جلالی نے رات کو میڈیاسے گفتگو میں کہا کہ ان کے مطالبات آئینی، ایمانی اور قرآنی ہیں۔ منوا کرہی واپس جائیں گے ۔

ڈاکٹراشرف جلالی نے مزید کہا کہ وہ اس جہدوجہد میں بیہوش ہوجائیں تو انھیں ہسپتال منتقل نہ کیا جائے ۔ انھوں نے گرفتاری کی صورت میں جیل بھرو تحریک شروع کرنے کا بھی اعلان کیا۔

تحریک لبیک یارسوال اللہ کے مظاہرین نے اپنے مطالبات پھردہرائے اور کہا کہ وزیرقانون پنجاب رانا ثنااللہ کوبرطرف کیا جائے ۔ ختم نبوت کے قانون میں ترمیم کی کوشش کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں