116

عائشہ گلالئی کے سابق پرنسپل سیکریٹری قتل

پاکستان تحریک انصاف کی منحرف رکن اسمبلی عائشہ گلالئی کے سابق پرنسپل سیکریٹری نورزمان کو خیبرپختونخوا کے علاقے لکی مروت میں فائرنگ کر کے قتل کردیا گیا۔

پولیس نے عائشہ گلالئی کے سابق پرنسپل سیکریٹری نورزمان کے قتل کی تصدیق کردی ہے۔

نورزمان کو نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے لکی مروت کے علاقے تجوڑی میں فائرنگ کا نشانہ بنایا۔ پولیس نے لاش کو تحویل میں لے کر تفتیش کا آغاز کردیا ہے۔

خیال رہے کہ نورزمان نے عائشہ گلالئی کی جانب سے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کے خلاف پریس کانفرنس کے بعد قومی احتساب بیورو اور صوبائی احتساب کمیشن میں عائشہ گلالئی کے خلاف درخواست دی تھی۔

نور زمان اور پی ٹی آئی کے دیگر 2 رہنماؤں نے عائشہ گلالئی کے خلاف نیب میں درخواست دائر کی تھی۔

عائشہ گلالئی کے خلاف درخواست 8 اگست کو دائر کی گئی تھی جس میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ رکن قومی اسمبلی عائشہ گلالئی اور ان کے والد شمس القیوم متعدد ترقیاتی اسکیموں میں کرپشن اور غبن میں ملوث ہیں۔

شکایت گزاروں کی جانب سے درخواست کے ہمراہ مبینہ کرپشن کے دستاویزی ثبوت بھی فراہم کیے گئے تھے اور نیب سے درخواست کی تھی کہ وہ انتظامیہ کو مزید تحقیقات کی ہدایات جاری کریں۔

نور زمان کے علاوہ دیگر دو شکایت گزاروں میں پی ٹی آئی کے ضلعی صدر سلیم نواز خان اور انجینیئر عارف مروت شامل تھے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نیب نے عائشہ گلالئی کے خلاف ابتدائی تحقیقات کے بعد پی ٹی آئی رہنما کی درخواست کو خارج کرتے ہوئے کہا تھا کہ عائشہ گلالئی پر کرپشن کا ثبوت نہیں ہے لہٰذا ان کے خلاف الزامات بے بنیاد ہیں۔

واضح رہے کہ یکم اگست کو عائشہ گلالئی نے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے پارٹی چھوڑنے کا اعلان کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں