179

پولی گراف ٹیسٹ: مفتی عبدالقوی مجرم قرار

قندیل بلوچ قتل کیس، پولی گراف ٹیسٹ میں مفتی عبدالقوی پھنس گئے. ‏پولی گراف ٹیسٹ کی باضابطہ رپورٹ پیرکوجاری ہوگی

‏قتل میں ملوث ہونےسےعبدالقوی کایکسرانکار مشین نے جھوٹ قرار دے دیا‏. اس کے علاوہ پولیس تفتیش کےدوران بھی عبدالقوی غیراخلاقی حرکات میں ملوث پائے گئے. ذرائع کا کہنا ہے کہ فارنزک اورپولی گراف ٹیسٹ کےبعدعبدالقوی کےگردقانون کاشکنجہ مزید سخت ہوگیا.

واضح رہے کہ پنجاب فورنزک سائنس ایجنسی کی ویب سائٹ کے مطابق پولی گراف مشین ایسا سائنسی آلہ ہے جو کہ بلڈ پریشر، سانس، نبض اور جلد میں ہونے والی جسمانی تبدیلیوں کو اس وقت ناپتا ہے جب ملزم کا بیان ریکارڈ کیا جا رہا ہوتا ہے۔

یہ خیال کیا جاتا ہے کہ اس طریقہ کار سے اگر ملزم جھوٹ بولے تو اس کے ردِ عمل کا موازنہ سچ بولے جانے والے ردِ عمل سے کیا جا سکتا ہے۔ تاہم اس ٹیسٹ کے درست نتائج کا زیادہ تر دارومدار ٹیسٹ کرنے والے شخص کی مہارت پر ہوتا ہے۔

ٹیسٹ سے قبل ملزم کو نہیں بتایا جاتا کہ اس کا پولی گراف ٹیسٹ کیا جائے گا، ٹیسٹ سے 24 گھنٹے قبل اس بات کو یقینی بنایا جاتا ہے کہ ملزم اچھی طرح سے آرام کر چکا ہے اور کسی قسم کی دوا کے اثر میں نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں