62

لاہور: گریڈ سترہ کے افسر کو چپڑاسی بنادیا گیا

لاہور (20 اکتوبر 2017) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے شیخ زید میڈیکل کالج کے گریڈ سترہ کے اکائونٹ اسسٹنٹ کو چپڑاسی بنانے کے خلاف درخواست پر کالج انتظامیہ اور وفاقی و صوبائی سیکرٹری صحت سے وضاحت مانگ لی۔

مدثر سلیم کی جانب سے دائر درخواست میں ان کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ درخواست گزار کی تعلیم ایم کام ہے اور مذکورہ میڈیکل کالج میں گریڈ سترہ میں بطور اکانٹ اسسٹنٹ 2010 میں بھرتی کیا گیا،اس وقت ادارے نے بطور ڈیلی ویجز ملازم بھرتی کیا تھا، 2011 میں وفاقی حکومت نے ڈیلی ویجز ملازمین کو ریگولر کرنے کا حکم دیا تو کالج انتظامیہ نے درخواست گزار کو گریڈ 17میں مستقل کرنے کی بجائے گریڈ ایک میں بطور چپڑاسی مستقل کردیا، درخواست گزار نے اس ناانصافی کے خلاف کالج انتظامیہ کو درخواست دی تھی لیکن کالج انتظامیہ نے درخواست پر کوئی کارروائی نہیں کی، جس پر 2013 میں لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دی جس پر عدالت نے 2015 میں انتظامیہ کو درخواست پر کارروائی کا حکم دیا لیکن عدالتی حکم کے باوجود انتظامیہ نے گریڈ 17میں بحال کرنے کی بجائے درخواست خارج کردی، انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت کالج انتظامیہ کے اس غلط فیصلے کو کالعدم قرار دے اور درخواست گزار کو مستقل کرنے کا حکم دیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں