86

عائشہ گلالئی نااہلی کیس کا فیصلہ محفوظ

الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کی منحرف رہنما عائشہ گلالئی کو ڈی سیٹ کرنے سے متعلق درخواست پر فریقین کے دلائل

مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا گیا

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں پی ٹی آئی کی منحرف رہنما عائشہ گلالئی کو ڈی سیٹ کرنے سے متعلق کیس کی

سماعت آج مکمل ہوگی، سماعت چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) سردار محمد رضا نے کی۔

بیرسٹر مسرور نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ عائشہ گلالئی نے جذبات میں آ کر استعفیٰ دینے کی بات کی۔ اگرزبانی کہنے سے

استعفیٰ قبول ہوتا تو تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی بھی پارلیمنٹ کاحصہ نہ ہوتے

عمران خان کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ عائشہ گلالئی کسی حلقے سے جیت کر قومی اسمبلی کی رکن منتخب نہیں

ہوئیں بلکہ قومی اسمبلی کی مخصوص نشست پر نامزد کی گئیں۔

سماعت کے دوران رکن الیکشن کمیشن نے عمران خان کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا ووٹ نہ دینے والے دیگر پارٹی ارکان

کو بھی نوٹس دیے گئے جس پر وکیل کا کہنا تھا کہ باقی ارکان نے ووٹ نہیں دیے تو پارٹی چھوڑنے کا اعلان بھی نہیں کیا۔

چیف الیکشن کمشنر نے سوال کیا کہ آپ کی جماعت سے مستعفی ہونے کا طریقہ کار کیا ہے جس پر وکیل نے بتایا کہ پی ٹی آئی

کے آئین میں کسی رکن کے لئے استعفیٰ دینے کا طریقہ کار نہیں ہے۔

الیکشن کمیشن نے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا جو چوبیس اکتوبر کو سنایا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں