191

ایوان وزرا کی مرضی سے نہیں چلے گا، ایاز صادق

اسلام آباد(12 ستمبر 2017)دو تہائی اکثریت والی حکومت کی قومی اسمبلی کا کورم دو مرتبہ ٹوٹ گیا ، سپیکر شدید برہم نظر آئے ، کہتے ہیں کہ ایوان وزرا کی مرضی سے نہیں ارکان کی مرضی سے چلے گا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر ایاز صادق کی زیر صدارت شروع ہوا تو نجی کارروائی کے دوران وزرا ایوان سے غائب نظر آئے۔

سپیکر شدید برہم ہوئے ، وزیر داخلہ احسن اقبال ، وزیر کیڈ طارق فضل چودھری ، شیخ آفتاب اور وزیر اطلاعات کو فون کر کے طلب کیا۔

سپیکر نے وزرا کی عدم موجودگی میں ہی ایجنڈا نمٹانا شروع کیا تو خورشید شاہ کھڑے ہوئے ، کہا کہ ایوان کی حالت دیکھ کر دکھ ہوتا ہے ، سپیکر نے کہا کہ وزراء نہیں آتے تو حکومت کیخلاف ووٹنگ کرا دونگا۔

ایم کیوایم نے لینڈ ریفارمز ترمیمی بل دو ہزار سترہ پاس کرانے کی کوشش کی تو ساتھ ہی پیپلز پارٹی کے اعجاز جاکھرانی نے کورم کی نشاندہی کر دی ۔

اجلاس شروع ہوا تو اعجاز جاکھرانی نے بل کی مخالفت کردی ۔تحریک انصاف کی شیریں مزاری اور حکومتی وزیرڈاکٹر طارق فضل نے بھی بل کی مخالفت کی۔

ایم کیو ایم کے ایس اے اقبال قادری ،فاروق ستار، رشید گوڈیل اور اسد عمر نے بل کی حمایت کر دی ، بحث کے بعد پینل آ ف دی چیئر نے بل کو متعلقہ کمیٹی کے سپرد کر دیا۔

محمود اچکزئی بولے کہ ایک طرف بل دوسری جانب انسانی زندگیوں کا معاملہ ہے ، ایک شخص کی بات کو ایوان سننے کو تیار نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں