323

پاکستان؛ 22کروڑ نوجوان تمبا کو نو شی کا شکار

پاکستان تمباکوکواستعمال کرنے والے بڑے ممالک میں سے ایک ہے جہاں 22ملین سے زائد نوجوان اس کااستعمال کررہے ہیں،جبکہ سالانہ ایک لاکھ سے زائد افرادپھیپھڑوںکے کینسر،اسٹروک،دل اورسانس کی بیماری کے سبب ہلاک ہوجاتے ہیں۔

ان خیالات کااظہار سینٹرروٹیرین شجاعت احمدصدیقی نے الفاروق اسکائوٹس اوپن گروپ خیرپورکی جانب سے نوٹربیکومہم کے حوالے سے ایک تقریب سے خطاب کے موقع پرکیا۔انہوںنے کہا کہ تمباکونوشی کے ساتھ رہنے والاایک گھنٹے میںجتناتمباکوسونگھتاہے وہ ایک سگریٹ پینے کے برابرہے ۔طبی تحقیق کے مطابق سگریٹ زندگی کے 11منٹ ضائع کرتی ہے ۔سگریٹ نوش کی زندگی کے اوسط 10سال کم ہوجاتے ہیں۔

اس موقع پرماہرفزیشن ڈاکٹرظفر جتوئی نے کہاکہ پھیپھڑوںکی بیماری کی اہم وجہ تمباکونوشی ہے ،ٹی بی سینٹروںمیں علاج کے لیے آنے والے مریضوںمیں 60فیصد سے زائد مریض تمباکونوشی کے متاثرہوتے ہیں،انہوںنے مزیدکہاکہ حکومتی پالیسی کے مطابق عام جگہ پبلک مقام ،دفاتر،ہوٹل ،بسوں،ٹرینوں شاپنگ سینٹرومال وغیرہ پرسگریٹ نوشی کیلئے ممنوعہ علاقہ قراردیئے جانے پرعمل درآمدکیاجائے ۔تقریب سے سینیئرصحافی محمداطہرصدیقی ،اسکائوٹ لیڈرعبدالواحد پٹھان اوردیگرنے بھی خطاب کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں