33

کراچی میں طوفانی بارش، 19 افراد جاں بحق

کراچی میں گذشتہ دو روز سے جاری طوفانی بارش کے دوران چھت گرنے اور کرنٹ لگنے کے مختلف واقعات میں اب تک 19 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

پیر اور منگل کی رات شہر قائد میں ہونے والی بارش نے نظام زندگی کو درہم برہم کردیا جبکہ کئی علاقوں میں دو روز سے بجلی کی فراہم بھی منقطع ہے۔

سرکاری حکام کی جانب سے اب تک جاں بحق ہونے والوں کی مصدقہ تعداد موصول نہیں ہوئی تاہم ہسپتالوں اور ریسکیو ذرائع کے مطابق بارش کے دوران ہونے والے مختلف واقعات میں دو خاتون اور ایک بچے سمیت تقریباً 19 افراد اپنی جان سے گئے۔

جاں بحق افراد میں سے زیادہ تر کرنٹ لگنے کے واقعات میں اپنی جان گنوا بیٹھے جن میں رشید آباد کی 35 سالہ رقیہ خاتون، نارتھ ناظم آباد کی 45 سالہ فاطمہ ولی محمد، بنگھوریہ کوٹھ عزیز آباد کے 45 سالہ کلیم اللہ، نیو کراچی کے 22 سالہ اسلم اور گلشن اقبال کے 45 سالہ غلام محمد شامل ہیں۔

سپر ہائی وے سے متصل جمالی گوٹھ میں واقع ایک گھر کی چھت بارش کے باعث گر گئی جس کے نتیجے میں ایک 56 سالہ شخص منظور اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھا۔

اسی طرح کا ایک واقعہ کنیز فاطمہ سوسائٹی میں پیش آیا جہاں ایک 30 سالہ شخص اپنے گھر کی چھت گرنے کی وجہ سے ہلاک ہوگیا، جبکہ سائٹ کے علاقے میٹرو ویل میں ایک مکان کی چھت گرنے کے نتیجے میں 2 افراد جاں بحق ہوئے۔

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے مطابق شہر میں ہنگامی مراکز قائم کردیے گئے ہیں جہاں ان کا ماہر عملہ 24 گھنٹے کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار ہے۔

شہر قائد میں تیز ہواؤں کے ساتھ ہونے والی بارش کے نتیجے میں بل بورڈ اور درخت گرنے کے واقعات بھی پیش آئے، اور سپر ہائی وے کے قریب قائم مویشی منڈی میں ایک بل بورڈ گرنے کی وجہ سے ایک 14 سالہ لڑکا جاں بحق جبکہ دو افراد زخمی بھی ہوئے۔

گذشتہ روز ہونے والی ابر رحمت سے شہر میں بجلی کا نظام بھی درہم برہم ہوگیا اور کئی علاقے تاریکی میں ڈوب گئے جن میں گلشن اقبال، ملیر، نارتھ ناظم آباد، گڈاپ، فیڈرل بی ایریا، لانڈھی اور ناظم آباد کے علاقے شامل ہیں۔

کے الیکٹرک کے مطابق کراچی میں زیادہ تر علاقوں کی بجلی بحال کردی گئی ہے جبکہ دیگر میں بحالی کا کام جاری ہے۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ شہر قائد میں بدھ کے روز بھی بارش جبکہ درجہ حرارت 34 سے 36 ڈگری تک رہنے کا امکان ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق اب تک سب سے زیادہ بارش ناتھ کراچی میں ریکارڈ کی گئی جہاں 41 ملی میٹر بارش ہوئی جبکہ دیگر علاقوں میں لانڈھی میں 39 ملی میٹر، پی اے ایف مسرور بیس میں 37 ملی میٹر، ناظم آباد میں 33.5 ملی میٹر، گلشن حدید میں 31 ملی میٹر، پی اے ایف فیصل بیس میں 30 ملی میٹر اور صفورہ گوٹھ میں 12 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

ادھر میئر کراچی وسیم اختر نے حکام کو بارش کے دوران کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ہر وقت تیار رہنے کی ہدایت جاری کردی۔ان کا کہنا تھا کہ شہر میں نظام زندگی کو بحال رکھنے کے لیے نکاسی آب کے نظام کو بہتر رکھنے کی کوشش کی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں